گدھے کو عزت

0
85

ہفتے کے روز ہزاروں گجراتی و کشمیری مسلمانوں کے قاتل ہندوستانی وزیر اعظم نریندرا مودی نے متحدہ عرب امارات کا ایک روزہ دورہ کیا جس میں اسے عرب امارات کے سب سے بڑے سول ایوارڈ “زید میڈل”سے نوازا گیا ۔ سوشل میڈیا اور اخبارات میں ایک طوفان برپا ہے ، ساری دنیا کا درد اپنے سینے میں محسوس کرنے والے پاکستانی عرب حکمرانوں کے اس گھٹیا فعل کو کشمیری مسلمانوں کے لہو کے ساتھ ایک گندہ مذاق سمجھ رہے ہیں ، اور دکھی ہیں اس قبیح حرکت پہ ۔
اس پہ کچھ نہ لکھنے کی وجہ سے میرے دوست مجھ سے ناراض تھے حالانکہ یہ کوئی اتنا اہم معاملہ نہ تھا ۔ خیر چھوڑئیے ، آئیے !


میں آپ کو ایک کہانی سناتا ہوں “کسی شہر میں اتفاقیہ ایک گدھے کو حکمرانی مل گئی، گدھے نے ٹھاٹ سے اپنا دور حکمرانی مکمل کیا ۔ وقت رخصت کسی نے گدھے سے پوچھا ” میاں گدھے تم کیسا محسوس کررہے ہو تمہاری بادشاہی میں کیا تبدیلی آئی ہے ؟” گدھے نے جواب دیا” باقی تو مجھے پتہ نہیں ، بس اتنا جانتا ہوں پانچ سال پہلے بھی میں گدھے کا بچہ تھا اور آج بھی گدھا ہی ہوں “۔
سو دوستوں کو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے ایسے ایوارڈز سے نہ مودی کی عزت بڑھی ہے نہ اس کے گھناؤنے جرائم میں کوئی کمی واقع ہوئی ہے ، اور نہ ہی بھارتی فوج مجاہدین کےہاتھوں برےانجام سے بچ پائیگی ان شاءاللہ ۔ ہاں البتہ کچھ آستین کے سانپ ضرور سامنے آگئے ہیں ۔
بھلا جو عرب حکمران اہل فلسطین کا ساتھ نہ دے سکے، حماس کی قوت کو ختم کرنے میں شامل رہے، شام کی بربادی پہ ان کے ہاتھ دعاوں سے آگے نہیں اٹھے ، مصرمیں اسلام پسندوں کی پھانسیوں پہ جن کے لب نہیں کھلے، یہ عیاش عرب ہندوستانی حسیناوں کے رسیا اہل کشمیر کے درد کا احساس کیسے کر سکتے ہیں ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here